BiBi Zainab(s.a)

 بِسمِہ اللہِ الَرحَمٰن ِ الرَحیم ہ 

اللُھم صَلی عَلیٰ مُحَمد وَ آلِ مُحَمد ہ   

مُعجزہ حَضرتِ بی بی زَینَب سلامُ اللہ عَلیہا

   اسیرانِ کربلا کا سوگوار لٹا ہوا قافلہ بازارِ شام میں سے گزر رہا تھا تو یکایک تماشاِئِوں کے ہجوم میں سے ایک کوفی آگے بڑھ کرجنابِ زینب سلام اللہ علیہا کی خدمت میں حاضر ہوا اور عرض کی کہ میں نہایت تنگدست ہوں اور مجھے مفلسی نے ہر طرف سے گھیر رکھا ہے آپ۴  سخی بنتِ سخی ہیں میری امداد فرماِئیے ۔ کچھ عورتیں جو ایک مکان کے چھجے پر بیٹھی اسیروں کو حقارت کی نگاہ سے دیکھ رہی تھیں ہنس کر بولیں کہ وہ شخص جو خود قید میں ہو وہ تیری کیا مدد کر سکتا ہے ، شکر ہے کہ آج زینب بنتِ علی۴ ہماری اسیر ہیں ۔
 
ہے ،ہم تو ہر وقت اپنے خالقِ حقیقی کی رضا و خوشنودی کے لِئے تیار رہتے ہیں ، قیامت کے روز اپنے رسول اللہ کو کیا منہ دکھاوء گے جب وہ تم سے سوال کریں گے کے میری عترت کے ساتھ کیا سلوک کیا یہی اجرِ رسالت ہے کہ میرے بیٹوں کو بھوکا و پیاسا قتل کیا گیا اور میری بیٹیوں کو ننگے سر بے کجاوہ اونٹوں پر شہر بہ شہر پھرا یا گیا ۔ تم فکر نہیں کرو وقت قریب آ پہنچا ہے ، تہمیں اپنی گستاخی کا مزہ چکھنا ہو گا " ۔
 
پھر کوفی کی جانب رُخ کر کے فرمایا کے اے کوفی تو نے ایسے وقت میں ہمیں سخی بنتِ سخی کہہ کر پکارا ہے جب دنیا ہمارے مخالف ہے لہذا آ میرے قریب آ کر دیکھ ،جیسے جیسے میرا اونٹ قدم اُٹھاتا جا ئے تم اپنی خواہش کے مطابق زمین سے زر و جواہر اُٹھاتے جانا ۔ پس جیسے ہی کوفی کی نظر زمین پر پڑی تو دیکھا کہ جیسے جیسے اونٹ قدم اُٹھاتا جاتا ہے زمین بے بہا خزانہ اگلتی جا رہی ہے ۔  اِسی اثنا میں وہ کوفی یکایک دوڑا اور چلایا کہ آپ۴ سخی بنتِ سخی ہیں ، آپ۴ مجھے اپنے نانا کا کلمہ پڑھاِیئَے ۔  پس وہ کوفی مسلمان ہو گیا ۔

 

وہ عورتیں جس مکان کے چھجے پر بیٹھی اسیروں کو حقارت کی نگاہ سے دیکھ رہی تھیں اور طعن و تشنیع کر رہی تھیں اُس مکان کی چھت زمین پر آ گری اور تمام شامی عورتیں واصلِ جہنم ہو گئِں ۔

 

خُداوندِ عالم جس طرح تُو نے اُس کوفی کی مراد بہ طُفیلِ جنابِ بی بی زینب سلام اللہ علیہا پوری کی اِسی طرح تمام مومنین و مومنات کی دِلی و شَرعی حاجات کو بَر لا  اور ہماری اس قلیل عبادت کو اپنی بارگاہ احَدیت میں قبول و مقبول فرما ۔آمین یا ربُ العالمین

 

Add comment


Security code
Refresh

Bet atbet365 Bingo and win.